اب یہ خواہش کہاں

کیی راتیں بیتیں تیری یاد میں، تیری سوچ میں، تمھیں سوچتے ہوے

پر اب لگتا ہے کے وہ سارے لمحے بس اک فریب تھا خود سے

دل ہی کو خوش کرنے کی اک ناکام کوشش

کاش کے خیال پہلے ہی آجاتا کے تو اب نہ رہا وہ جس کی چاہ تھی کبھی

کاش تجھے بھی سمجھ ہوتی کے چاہت کیا چیز ہوتی ہے، اور تو نے اس کا کیا سلا دیا

اک خواہش سی بس رہ گی اب دل میں، کے تو جہاں رہے خوش رہے سدا

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s